نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل آتشزدگی


نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل آتشزدگی




15 اپریل 2019ء کی شام چھ بج کر پچاس منٹ کے لگ بھگ فرانس کے شہر پیرس میں واقع نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل کی چھت کے تلے اچانک آگ بھڑک اٹھی۔ اس کلیسا کی تاریخی اہمیت کے پیش نظر اس حادثے کی خبر فورا ہی دنیا بھر میں پھیل گئی۔ ابتک اس آتش زدگی کی وجوہات کا تعین نہیں کیا جا سکا البتہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ کلیسا کی تزئین و تعمیر نو کے دوران میں کسی وجہ سے یہ حادثہ پیش آیا ہوگا۔ کسی جانی نقصان کی بھی فی الحال کوئی اطلاع نہیں ہے۔ اس حادثے کی وجہ سے کلیسا کی چھت اور مینار زمین بوس ہو گئے اور اندرونی نقش و نگار و آرائش کو شدید ترین نقصان پہنچا۔

اہمیت

کلیسائے نوٹرے ڈیم فرانس کا مقبول اور معروف ترین مقام زیارت ہے اور دنیا بھر سے سالانہ 13 ملین سے زائد زائر یہاں آتے ہیں۔نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل ایک مدت تک یورپ کے مقدس اور اہم ترین کلیساؤں میں شمار رہا۔یہ گوتھک طرز تعمیر کے ان شاہکاروں میں شمار ہوتا ہے جن کی تزئین و آرائش اندرونی و بیرونی اپنی مثال ہے اور سینکڑوں سنگی و چوبی مجسمے اس کے درون و بیرون ایستادہ ہیں۔

Jusqu’à 50% de réduction sur les produits reconditionnés

حادثہ

غروب آفتاب کے قریب کلیسا کی آٹھ سو سالہ پرانی چھت میں آگ بھڑکی اور دیکھتے ہی دیکھتے پوری چھت کو لپیٹ میں لیکر خاکستر کر دیا۔

نگار خانہ

حوالہ جات

GIUSEPPE ZANOTTI TIFA

Text submitted to CC-BY-SA license. Source: نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل آتشزدگی by Wikipedia (Historical)



Langue des articles



ghbass

Quelques articles à proximité